اپوازیشن نامہ

ہم کریں گے کمال، ذرا حکومت جانے دو
اپنے پھر ماہ و سال، ذرا حکومت جانے دو

دیکھو کیسے گرتے ہیں ، بُت بڑے بڑے
دیکھنا ہمارا اب کمال ، ذرا حکومت جانے دو

انصاف عدالت کرے گی ، عوام ورنہ لڑے گی
کس کا مُنہ ہو گا لال ، ذرا حکومت جانے دو

تیر اور بلے سے کریں گے شیر کا ہم شکار
ہو گی پھر ہر طرف دھمال، ذرا حکومت جانے دو

سوئی قوم کو ہم دیکھاتے ہیں خواب نئے نئے
جاگنے کا چھوڑو خیال ، ذرا حکومت جانے دو

عدالت اپنی ، طاقت اپنی ، فوج و عوام بھی اپنی
امریکہ وی ہو گا نال، ذرا حکومت جانے دو

سب سیاہ ست والے ہیں ، ایک جیسے ہی اظہر
کم نہیں ہو گا استحصال ، بے شک حکومت جانے دو

Advertisements

جواب دیں

Fill in your details below or click an icon to log in:

WordPress.com Logo

آپ اپنے WordPress.com اکاؤنٹ کے ذریعے تبصرہ کر رہے ہیں۔ لاگ آؤٹ /  تبدیل کریں )

Google+ photo

آپ اپنے Google+ اکاؤنٹ کے ذریعے تبصرہ کر رہے ہیں۔ لاگ آؤٹ /  تبدیل کریں )

Twitter picture

آپ اپنے Twitter اکاؤنٹ کے ذریعے تبصرہ کر رہے ہیں۔ لاگ آؤٹ /  تبدیل کریں )

Facebook photo

آپ اپنے Facebook اکاؤنٹ کے ذریعے تبصرہ کر رہے ہیں۔ لاگ آؤٹ /  تبدیل کریں )

w

Connecting to %s

%d bloggers like this: