میرے نصیب میں اظہر ، کیوں کوئی بھی نہیں

آج دل اداس ہے ، کوئی تو سکون دے
کوئی تو آرام دے ، کوئی تو جنون دے

مر کہ بھی نہ مرے ، عجیب ہہے یہ زندگی
کوئی تو قرار دے ، کوئی تو سکون دے

ابھی صدائیں نہ دو ، ابھی سانس ہے میری
مجھے موت سی زندگی ، کرب سا سکون دے

گلی گلی میں خاک ہے ، جو سر میں ہے پڑی
جنون جنون ہے مگر مجھے جنوں سا جنون دے

میرے نصیب میں اظہر ، کیوں کوئی بھی نہیں
مجھے کوئی ملا نہیں جو مجھے جنون دے

Advertisements

جواب دیں

Fill in your details below or click an icon to log in:

WordPress.com Logo

آپ اپنے WordPress.com اکاؤنٹ کے ذریعے تبصرہ کر رہے ہیں۔ لاگ آؤٹ / تبدیل کریں )

Twitter picture

آپ اپنے Twitter اکاؤنٹ کے ذریعے تبصرہ کر رہے ہیں۔ لاگ آؤٹ / تبدیل کریں )

Facebook photo

آپ اپنے Facebook اکاؤنٹ کے ذریعے تبصرہ کر رہے ہیں۔ لاگ آؤٹ / تبدیل کریں )

Google+ photo

آپ اپنے Google+ اکاؤنٹ کے ذریعے تبصرہ کر رہے ہیں۔ لاگ آؤٹ / تبدیل کریں )

Connecting to %s

%d bloggers like this: