بھیڑئیے نے بھیڑئیے کو پھاڑ ڈالا ، بات ختم

بہت کچھ کہا جا رہا ہے بہت کچھ کہا جائے گا مگر میرے پسندیدہ مصنف و شاعر اسرار ناروی المعروف ابن صفی کا یہ قطعہ کتنا ہی سچا ہے ، اور سب کچھ کہ بھی رہا ہے
 
 
کچھ بھی تو اپنے پاس نہیں بجز متاع جاں
اب اس سے بڑھ کہ اور بھی ہے کوئی امتحاں
ہم خود ہی کرتے رہتے ہیں فتنوں کی پرورش
آتی نہیں ہے کوئی بلا ہم پہ ناگہاں
 
 
اور بعد میں انہیں کی زبان میں اسکا انجام
 
 
یہ تو جنگل ہے کسی کی لاش پہ روئے گا کون
بھیڑئیے نے بھیڑئیے کو پھاڑ ڈالا ، بات ختم
Advertisements

One response to this post.

  1. superb,very nice collection .it seems a gr8 reader and writer inside u

    جواب دیں

جواب دیں

Fill in your details below or click an icon to log in:

WordPress.com Logo

آپ اپنے WordPress.com اکاؤنٹ کے ذریعے تبصرہ کر رہے ہیں۔ لاگ آؤٹ / تبدیل کریں )

Twitter picture

آپ اپنے Twitter اکاؤنٹ کے ذریعے تبصرہ کر رہے ہیں۔ لاگ آؤٹ / تبدیل کریں )

Facebook photo

آپ اپنے Facebook اکاؤنٹ کے ذریعے تبصرہ کر رہے ہیں۔ لاگ آؤٹ / تبدیل کریں )

Google+ photo

آپ اپنے Google+ اکاؤنٹ کے ذریعے تبصرہ کر رہے ہیں۔ لاگ آؤٹ / تبدیل کریں )

Connecting to %s

%d bloggers like this: