اک حُسن پا بہ زنجیر ہے

اک حُسن پا بہ زنجیر ہے
ہر عشق جسکے لئے دلگیر ہے
آزادی جسکا خواب ہے
آزادی ہی تعبیر ہے
 
 
وہاں جو جواں و پیر ہے
ظلم کے ہاتھوں اسیر ہے
جہاں آزادی کا رانجھا ہے
جہاں شہادت کی ہیر ہے
 
اک حُسن پابہ زنجیر ہے
ہر عشق جسکے لئے دلگیر ہے
 
 
ہر ایک ہاتھ میں شمشیر ہے

  جذبے کی کماں وفا کا تیر ہے
آزادی جسکی تقدیر ہے

وہ میرا کشمیر ہے
وہ میرا کشمیر ہے

 

Advertisements

2 responses to this post.

  1. Posted by Iftikhar Ajmal on فروری 5, 2009 at 10:30 صبح

    ہم کیا چاہتے ہیں ؟ آزادی آزادی آزادی

    جواب دیں

  2. well. appreciate much/ j.a.qureshi

    جواب دیں

جواب دیں

Fill in your details below or click an icon to log in:

WordPress.com Logo

آپ اپنے WordPress.com اکاؤنٹ کے ذریعے تبصرہ کر رہے ہیں۔ لاگ آؤٹ / تبدیل کریں )

Twitter picture

آپ اپنے Twitter اکاؤنٹ کے ذریعے تبصرہ کر رہے ہیں۔ لاگ آؤٹ / تبدیل کریں )

Facebook photo

آپ اپنے Facebook اکاؤنٹ کے ذریعے تبصرہ کر رہے ہیں۔ لاگ آؤٹ / تبدیل کریں )

Google+ photo

آپ اپنے Google+ اکاؤنٹ کے ذریعے تبصرہ کر رہے ہیں۔ لاگ آؤٹ / تبدیل کریں )

Connecting to %s

%d bloggers like this: