معجزے آج بھی ہوتے ہیں

مجھے نہیں معلوم کہ  بات کیسے شروع کروں ، ہاں اس پروردگار کا شکر ہے جس نے مجھے اس مشینی دور میں معجزے دیکھنے کا موقع دیا اور ایسے لوگوں سے ملوایا جن کے بارے میں صرف سنا تھا یا پڑھا تھا ۔۔۔۔۔
پچھلے چالیس پچاس دن میرے لئے  کیسے گذرے میں جانتا ہوں یا میرا اللہ  ۔ ۔ ۔ ۔   اس دن میں آفس سے گھر آ رہا تھا کہ میری بیگم کی ڈاکٹر کا فون آیا ، کہ آپ کی وائف کی رپورٹس آئیں ہیں اور اچھی نہیں ہیں ، آپ اکیلے مجھ سے مل لیں  ۔۔  ۔ اور جب میں ان سے ملا تو بتایا کہ آپ کی وائف کو کارسینوما ہے جسے عرف عام میں بریسٹ کینسر کہتے ہیں ، اور مجھے فوراً آپریشن کروانا ہو گا کہ کینسر اپنی جڑیں پھیلا رہا ہے  ۔ ۔ ۔ میں صحیح معنوں میں کنگ ہو کر رہ گیا  ۔ ۔ ۔ میں کیسے بیگم سے کہوں گا کہ اسے کیا ہے میں جانتا ہوں کہ وہ بہت جلدی دل چھوڑ دیتی ہے چھوٹی چھوٹی باتوں کو دل پر لے لیتی ہے اور اتنی بڑی بات  ۔ ۔ ۔  اور پھر لفظ سرطان ہی ایسا لفظ ہے جو خود ہی ایک خطرناک ہے   ۔ ۔ ۔ بہرحال میں نے بیگم کو بتانے سے پہلے اپنی چھوٹی بہن جو پنڈی میں ہے اور ڈاکٹر ہے ، اس کو بتایا اور رپورٹس کو ای میل کیا  ۔ ۔  اسنے وہاں کے ڈاکٹرز سے مشورے کے بعد کہا کہ جتنی جلدی ہو سکے آپریشن کرنا ہے اور ایک ایک دن قیمتی ہے  ۔ ۔ ۔  میں اس پردیس میں اکیلا کیا کرتا یہاں یو اے ای میں فیملی میں سے کسی کو بلانا بہت مشکل تھا اور اوپر سے میری فنانشل پوزیشن بھی بہت خراب تھی  ۔ ۔ ۔ ۔ اور یہ آپریشن اور اسکے بعد کے پروسیجرز  ۔ ۔ ۔ مجھے چار ماہ سے ایک سال تک کے علاج کا کہا گیا ۔ ۔ ۔ ۔ ۔  پھر میرے بچے کو کون سنبھالتا میری نوکری کا کیا ہوتا  ۔ ۔ ۔ بے شک میرے باسز اچھے ہیں انہوں نے سب کچھ سمجھا مگر نوکری تو نوکری ہی ہے  ۔ ۔ ۔ سو میں نے پاکستان میں آپریشن کروانے کا  فیصلہ کیا  ۔ ۔ ۔ اور اپنی بہن کے تعاون سے پاکستان میں اسکا ارینج کر لیا  ۔ ۔ ۔ بیگم کو بتایا کہ اس گلٹی کو نکالنے کا آپریشن کرنا پڑے گا اور کیونکہ بعد میں مشکل ہو گی  ۔ ۔ ۔ مگر پھر بھی نہیں بتایا کہ یہ کینسر ہے  ۔ ۔ ۔  اگر میں بتا دیتا تو شاید وہ آپریشن کے لئے تیار ہی نہ ہوتی  ۔ ۔  ۔
اسی دوران میں یہاں (شارجہ) میں ایک سرجن سے بھی کنسلٹ کیا تو انہوں نے بھی فوری آپریشن کا کہا  ۔ ۔ ۔ اور پھر میں ٢٨ اکتوبر کو پاکستان آ گیا  ۔ ۔ ۔ جہاں ٢٩ اکتوبر کو سب ٹسٹ دوبارہ کئیے گئے اور پتہ چلا کہ کینسر تیزی سے پھیل رہا ہے اور ڈاکٹرز نے ٣٠ اکتوبر بروز جمعہ المبارک کو دوپہر ساڑھے تین بجے آپریشن شروع کیا گیا ، تین سرجن ڈاکٹر تین ڈاکٹر اور چار امدادی افراد نے اس آپریشن کو انجام دیا میری بہن نے بھی آپریشن کو اسسٹ کیا گو ڈاکٹروں نے منع کیا تھا مگر  ۔ ۔ ۔ اس نے نہیں مانا  ۔ ۔ ۔ دو سے ڈھائی گھنٹے کا آپریشن کہا گیا تھا مگر آپریشن چھے گھنٹے طویل ہو گیا  ۔ ۔ ۔ وہ چھے گھنٹے میں نے اور میری فیملی نے کیسے گذارے آپریشن تھیٹر کے باہر  ۔ ۔  ہمیں ہی معلوم ہے درمیان میں جب میری بہن نے بتایا کہ جتنا سوچا تھا اس سے کہیں زیادہ بڑا کینسر ہے تو ہم نے اللہ کے آگے اپنی جبینیں جھکا دیں  ۔ ۔ ۔  جس سے جو ہوا وہ پڑھا  ۔ ۔ ۔  دنیا میں جہاں جہاں میرے دوست تھے  رشتے دار تھے انہیں فون کر کہ دعا کے لئے کہا  ۔   ۔ ۔ ۔ ۔ کیونکہ اتنا لمبا انستھیزیا بہت ہی مشکل کام ہوتا ہے اور پھر میری بہن جب آپریشن تھیٹڑ سے نکلی اور مجھ سے لپٹ کر دھاڑیں مار مار کہ رونے لگی تو میرا دل جیسے بند ہو گیا  ۔ ۔ ۔ ۔ پھر اسکے منہ سے نکلا کہ اللہ نے معجزہ کر دیا اتنا مشکل آپریشن کامیاب ہو گیا  ۔ ۔ ۔ تو میں  وہیں سجدے میں گر گیا  ۔  ۔ ۔ ۔ ۔
ہم سب نے سجدہ شکر ادا کیا اور بیگم کو آئی سی یو میں منتقل کر دیا گیا  ۔ ۔ ۔  انہیں ہوش میں لایا گیا تھا مگر ابھی تک وہ انستھیزیا کے اثر میں تھیں خون کی بوتلیں لگیں تھیں  ۔ ۔ ۔ ۔  اور پھر اگلے چوبیس گھنٹے ہمارے آنکھوں آنکھوں میں گذر گئے  ۔ ۔ ۔ اور پھر جب وہ تک وہ اچھی طرح سے ہوش میں نہیں آئیں مجھے ان سے نہیں ملنے دیا گیا  ۔ ۔ ۔ ۔
اور پھر ٹیسٹ پے ٹیسٹ اور جانے کیا کیا  ۔ ۔ ۔  اگر ایک قدم گھر میں تھا تو دوسرا قدم ہسپتال میں  ۔ ۔ ۔  میں سلام کرتا ہوں ان ڈاکٹرز کو جنہوں نے یہ آپریشن کیا  ۔ ۔ ۔ خاص کر ڈاکٹر شوکت جو شہریار ہسپتال کے جنرل سرجن ہیں ، اور دوسرے ڈاکٹر حنیف جو مین سرجن ہیں اور پھر فزیشن ڈاکٹر ابرار  ۔ ۔ ۔ جنکے مخصوص انداز نے میری بیگم کو بہت حوصلہ دیا  ۔ ۔ ۔   ان سب کے علاوہ ڈیوٹی ڈاکٹرز ، ڈاکٹر قاسم اور سسٹر انیتا نے بھی ہمیں ہماری پریشانی کو شئیر کیا  ۔ ۔ ۔ میری سسٹر کے ہسپتال کے ایم ڈی ، ڈاکٹر حسنین ، جنہوں نے بھائیوں کی طرح میرا ساتھ دیا  ۔ ۔ ۔ اللہ انہیں اسکی جزا دے
پھر ٨ نومبر کو میں نے اپنے ابو کی قبر پر حاضری دی ، اگلے دن انکی برسی تھی ، میں ذاتی طور پر مشکور ہوں صاحبزادہ ساجد الرحمَن صاحب جو بیہار شریف کے گدی نشین ہیں اور پاکستان کے بہت بڑے اسلامی ریسرچ اسکالر بھی ہیں ، انکی ابو کی برسی پر خصوصی شرکت کی اور ہمارے لئے دعائے خیر کی  ۔ ۔ ۔ (میری بیگم ان سے بعیت بھی ہیں )
اور پھر اگلے دن یعنی ١٠ نومبر کو بیگم کو ڈسچارج کر دیا گیا اور اسی رات میری دبئی کے لئے فلیٹ بھی تھی ، آفس میں میری بہت کمی ہو رہی تھی بہت سارے کام رک گئے تھے  ۔ ۔ ۔ سو میں واپس آ گیا  ۔ ۔  کیونکہ مجھے خرچے کا بھی انتظام کرنا تھا  ۔ ۔ ۔
مجھے پتہ تھا کہ آپریشن تو آغاز تھا اب مزید مشکل مرحلہ آنے والا تھا جسکے لئے ڈاکٹرز نے بیگم کو تیار کرنا تھا اور مزید ٹیسٹ لینے تھے اور پھر انہیں ٹیسٹ کے درمیان ایک اور چیز کا پتہ چلا کہ بیگم کے پتے میں پتھری ہے  ۔ ۔ ۔ اور اسکا علاج صرف از صرف پتے کا آپریشن ہے  ۔ ۔  یا خدایا ایک اور آپریشن  ۔ ۔ ۔ بیگم نے دل ہی چھوڑ دیا  ۔ ۔ ۔  گھر میں ایک بار پھر فضا بدل گئی میری بھی زندگی میں تناؤ بڑھ گیا  ۔ ۔ ۔ کام میں کیا دل لگاتا  ۔  ۔ صبح شام بس تسلیاں دے رہا تھا خود کو اور گھر والوں کو بھی  ۔ ۔ ۔ اور بیگم ایک بار پھر ہسپتال میں داخل ہو گئیں پتے کے آپریشن کے لئے ، ڈاکٹرز کا کہنا تھا کہ کیمیوتھراپی اور ریڈی ایشن سے پہلے آپریشن کرنا ضروری ہے کیونکہ کیمیو تھراپی سے انسان میں کمزوری ہو جاتی ہے اور پھر بہت مشکل ہو جائے گا آپریشن کرنا ، بہت سارے ٹیسٹ کے بعد گذشتہ جمعے کا دن آپریشن کا طے پا گیا (٢١ نومبر)  ۔ ۔ ۔
اور پھر اللہ نے ہم پر اپنا کرم کرنا شروع کیا ،  جمعرات کو میری ممانی نے ایک شخص کا پتا بتایا اور وہ شخص آیا اور اسنے آکر بیگم کو دم کیا اور پانی دیا  ۔ ۔ ۔ اور جمعے والے دن ہی انہوں نے پانی پیا اور انکا الٹرا ساؤنڈ بدل گیا  ۔ ۔ جی ہاں وہ پتھر  ۔ ۔  ریزہ ریزہ ہو گیا اور ڈاکٹرز حیران رہ گئے اور  ۔ ۔  ہر طریقے سے چیک کیا گیا  ۔  ۔ ۔ مگر دنیا کی سائنس کے پاس کوئی جواب نہ تھا اس اللہ کے کلام کی شفا کا  ۔ ۔ ۔ ۔  اور ڈاکٹرز کو کہنا پڑا کہ اب آپریشن کی ضرورت نہیں
بات یہاں پر ہی ختم نہیں ہوئی ، اگلے دن یعنی آج (٢٢ نومبر) کی صبح کو بیگم کا بون اسکین کیا گیا ، جس میں کینسر کا ایک بھی سیل نہیں تھا  ۔ ۔ ۔ یعنی بیگم کو اب شاید کیمیو تھراپی کی بھی ضرورت نہیں   ۔۔  ۔ ۔  یہ سب دو دن میں ہوا   ۔ ۔ ۔ دو دن پہلے کی رپورٹز اور دو دن کے بعد کی رپورٹز میں زمین آسمان کا فرق تھا  ۔ ۔  ۔ ۔ ہم سب سجدے میں چلے گئے اس رب کی جو ہر چیز پر قادر ہے  ۔  ۔ ۔  ڈاکٹرز نے اپنے یقین کے لئے بار بار ٹیسٹ کئے مگر اللہ کی سائنس کے آگے اس دنیا کی سائنس کچھ بھی نہیں تھی  ۔ ۔ ۔ ۔  کوئی جواب نہیں تھا  ۔ ۔ ۔ اور اللہ نے یہ شفا ایک عام سے آدمی کے ہاتھ میں رکھی تھی ، جسکے چہرے پر نہ تو داڑھی تھی نہ ہی وہ کوئی بہت اونچا نظر آتا تھا  ۔ ۔  ۔ وہ عام لگتا ہے  ۔ ۔ ۔ اور وہ شخص ہے جب ہم نے اسے کچھ دینے کی کوشش کی تو اسکی آنکھوں میں آنسو تھے وہ کہنے لگا کہ اگر میں انہیں ہاتھ بھی لگاؤں گا تو شاید اللہ مجھ سے یہ قدرت چھین لے  ۔  ۔  اسنے ہمیں شکرانے کے نفل پڑھنے کا کہا اور صدقے کا کہا  ۔ ۔  میں آج جب ان سے بات کر رہا تھا تو میرے منہ سے آواز نہیں نکل پا رہی تھی ۔ ۔ ۔  وہ شخص جو ہمارے لئے مسیحا بن کہ آیا  ۔ ۔ ۔ اور وہ خود بھی رو رہے تھے اور کہ رہے تھے کہ یہ سب اللہ کا کرم ہے جس نے انہیں یہ توفیق دی  ۔ ۔  ۔ اور پھر میں نے ان سے اجازت لی کہ میں انکے نام کو دوسروں تک پہنچاؤں تا کہ دنیا بھر کے لوگ انکی دعاؤں سے مستفیض ہو سکیں  ۔ ۔ ۔  اور انہوں نے کہا ضرور  ۔ ۔
تو دوستو اس اللہ کے دوست کا نام ہے  عابد کیانی ، اور انکا فون نمبر ہے  –5127632 -0092333  مجھے یقین ہے ضرورت مند انہیں فون کر کہ ضرور مستفیض ہونگے ، اور میں یہ بھی یقین رکھتا ہوں کہ دوست ان کے لئے دعا کریں گے اور مجھے بھی اپنی دعاؤں میں یاد رکھیے گا  ۔ ۔ ۔ ۔
Advertisements

11 responses to this post.

  1. اللہ تعالٰی آپکی موجودہ اور آنے والی ساری پریشانیوں کو بھی دور فرمایے
    اور باقی سارری امت کی بھی
    اللہ کرے کہ زیادہ سے زیادہ لوگ ان صاحب سے فیضیاب ہوں
    اور اآپکے لیے صدقہ جاریہ کا باعث بنیں

    اٰمین
    آپ یقینا٘ اللہ کے نیک بندے ہیں، ہمیں بھی اپنی دعاوں میں یاد رکھیے گا
     

    جواب دیں

  2. Posted by ماوراء on نومبر 23, 2008 at 1:04 صبح

    سبحان اللہ۔ یہ تو واقعی معجزہ ہے۔ آپ خوش قسمت ہیں۔ اللہ سے دعا ہے کہ آپ کی بیگم کو مکمل صحت و تندرستی عطا فرمائے۔

    جواب دیں

  3. Posted by Mera Pakistan on نومبر 23, 2008 at 2:28 صبح

    خدا کا لاکھ لاکھ شکر ہے کہ اس نے آپ کی بیگم کو اس سے بھی بڑی تکلیف سے بچا لیا۔ فکر کی ضرورت نہیں کیونکہ بریسٹ کینسر کے مریض آپریشن کے بعد اچھی زندگی گزارتے ہیں۔ ہماری ایک بہن کا بھی آپریشن کوئی دس سال قبل ہوا تھا اور وہ بھرپور صحت مند زندگی گزار رہی ہیں۔ اگر کسی بھی قسم کی مدد کی ضرورت ہو تو ہمیں اپنا ہی سمجھیے گا ہم آپ کو مایوس نہیں کریں گے۔ ہم آپ کی صرف ایک ای میل کی دوری پر ہیں۔

    جواب دیں

  4. Posted by Tuzk.net on نومبر 23, 2008 at 5:24 صبح

    May God give you and your wife a healthy wealthy life.

    جواب دیں

  5. Posted by Tuzk.net on نومبر 23, 2008 at 5:24 صبح

    May God give you and your wife a healthy wealthy life.

    جواب دیں

  6. اللہ کا شکر ہے آپکی بیگم ٹھیک ہو گءیں۔ اللہ انہیں جلد از جلد شفائے کاملہ عطا فرمائے۔

    جواب دیں

  7. Posted by Iftikhar Ajmal on نومبر 23, 2008 at 1:11 شام

    بیگم کی صحت آپ کو مبارک ہو ۔ اللہ سبحانُہُ و تعالٰی برا کارساز ھے اور شافی ہے ۔ دوائیاں اور جراحی وغیرہ سب ٹوٹکے ہیں ۔ انسان  اللہ کی کس کس نعمت کو جھٹلائیں گے ؟

    جواب دیں

  8. سبحان اللہ ۔۔۔ واقعی معجزے اس زمانے میں بھی ہوتے ہیں ۔۔۔ اللہ تعالٰی آپ کی بیوی کی صحت و تندرستگی کے ساتھ ساتھ لمبی عمر نصیب کرے۔دوسری بات کیانی صاحب کے بارے میں اگر آپ ان کے ایڈریس وغیرہ لکھ دیتے تو اچھا تھا کیونکہ میرا دوست گزستہ دو سال سے انتہائی تکلیف میں مبتلا ہے اس سلسلے میں اگر مزید کچھ رہنمائی مل جائے تو ۔۔۔۔۔۔!

    جواب دیں

  9. Posted by Azhar Ul Haq on نومبر 24, 2008 at 6:53 شام

    آپ سب دوستوں کا بہت بہت شکریہ ، آپ سب کی دعاؤں کی مجھے اشد ضرورت ہے ، میں نے عابد کیانی صاحب کا نمبر لکھ دیا ہے اور وہ پنڈی میں رہتے ہیں ، ضرورت مند ان سے ضرور رابطہ کریں  ۔ ۔ ۔  ایک بار پھر آپ تمام دوستوں کا شکریہ

    جواب دیں

  10. Azhar sahib allah talla apko or apki family ko apny hifz.e amaan ma rakhy aameen
    apni duawoo ma yaad rahie ga
    Mahmood malik
    uk

    جواب دیں

  11. اظہر بھائی۔۔۔ آج کل کی دنیا میں ہنسانا آسان ہو گیا ہے۔۔۔ کئی مڈیمز نکل آئے ہیں۔۔۔ لیکن کسی کی تحریر پڑھ کر آنسو آجائیں۔۔۔ یہ پہلے نا کبھی سنا تھا اور نا کبھی محسوس کیا تھا۔۔۔ آپ نے اتنے حوصلے سے یہ سب لکھ دیا کہ عام انسان کے لیے یہ کہنا بھی بے حد مشکل ہے۔۔۔ اب میں سوچ رہا ہوں کہ یا تو میں بہت حد تک جذباتی انسان ہوں یا آپ کی تحاریر میں ہی کوئی ایسا جادو ہے جس نے میری آنکھوں کو آج بڑے عرصے بعد غسل دے دیا۔۔۔ اللہ آپ کی مشکلات آسان فرمائے۔۔۔ آمین۔۔۔

    جواب دیں

جواب دیں

Fill in your details below or click an icon to log in:

WordPress.com Logo

آپ اپنے WordPress.com اکاؤنٹ کے ذریعے تبصرہ کر رہے ہیں۔ لاگ آؤٹ / تبدیل کریں )

Twitter picture

آپ اپنے Twitter اکاؤنٹ کے ذریعے تبصرہ کر رہے ہیں۔ لاگ آؤٹ / تبدیل کریں )

Facebook photo

آپ اپنے Facebook اکاؤنٹ کے ذریعے تبصرہ کر رہے ہیں۔ لاگ آؤٹ / تبدیل کریں )

Google+ photo

آپ اپنے Google+ اکاؤنٹ کے ذریعے تبصرہ کر رہے ہیں۔ لاگ آؤٹ / تبدیل کریں )

Connecting to %s

%d bloggers like this: