لوگو سن لو لوگو سن لو شاہ کا سندیس

بستی بھوکی ، شہر بھی بھوکا ، بھوکا سارا دیس
بھوک کا سایہ گلی گلی میں پھرے بنا کہ بھیس
ہر طرف ہے خوشحالی ، کہتا ہے یہ درویش
لوگو سن لو لوگو سن لو شاہ کا  سندیس
 
تن خالی ہے کپڑوں سے ، من خالی خیالوں سے
بانجھ ہوئی ہے قوم مری، جکڑی ہے جالوں سے
بھیک کا کاسہ توڑ دیا ، ماری ہے ایسی ٹھیس
لوگو سن لو لوگو سن شاہ کا سندیس
 
جینے کی مشکل  کم کر دے ، لے کے اپنی اپنی جان
میری بستی میں اب انساں بھی نہیں رہا ہے  انسان
جیت چکے ہیں اب ہم مشکل سے مشکل  ریس
لوگو سن لو لوگو سن لو شاہ کا یہ سندیس
 
کل تھا مشکل ، آج ہے مشکل ، مشکل ہو گا کل
پل پل ہمیں جلائے ہے اب ، ہوا ،مٹی ، آگ اور جَل
کر دیا آساں جینا ، کل  خوشیوں سے ہے لیس
لوگو سن لو لوگ سن لو شاہ کا یہ سندیس
 
ردا و آنچل تار تار ، وحشی درندے حاکم لوگ
مردے کو بھی کھانے والے ، حد سے کمینے ظالم لوگ
جدت دیکھو، آدھی حیا،آدھی شرم ، آدھے کیس
لوگو سن لو لوگو سن لو شاہ کا سندیس
 
Advertisements

جواب دیں

Fill in your details below or click an icon to log in:

WordPress.com Logo

آپ اپنے WordPress.com اکاؤنٹ کے ذریعے تبصرہ کر رہے ہیں۔ لاگ آؤٹ / تبدیل کریں )

Twitter picture

آپ اپنے Twitter اکاؤنٹ کے ذریعے تبصرہ کر رہے ہیں۔ لاگ آؤٹ / تبدیل کریں )

Facebook photo

آپ اپنے Facebook اکاؤنٹ کے ذریعے تبصرہ کر رہے ہیں۔ لاگ آؤٹ / تبدیل کریں )

Google+ photo

آپ اپنے Google+ اکاؤنٹ کے ذریعے تبصرہ کر رہے ہیں۔ لاگ آؤٹ / تبدیل کریں )

Connecting to %s

%d bloggers like this: