اردو کی درمیانی کتاب – 11 – طبعیات

مادے کے علم کو کیمیاء کہتے ہیں اور اسکے تعلقات کے مطالعے کو فزکس (طبعیات) کہا جاتا ہے ، طبعیات بہت وسیع علم ہے جو اپنے اندر کیماء ، حساب ، فلکیات اور انسانیات سب کچھ سموئے ہوئے ہے ، کچھ صدیاں پہلے تک طبعیات کو فلسفے کی ایک شاخ کے طور پر ہی دیکھا جاتا تھا ، اسی لئے پرانے سائنسدان نہ صرف کیمیاء ، طبعیات اور دوسرے مادی علوم کے ماہر ہوتے تھے بلکہ وہ فلسفے پر بھی دسترس رکھتے تھے
Advertisements

جواب دیں

Fill in your details below or click an icon to log in:

WordPress.com Logo

آپ اپنے WordPress.com اکاؤنٹ کے ذریعے تبصرہ کر رہے ہیں۔ لاگ آؤٹ / تبدیل کریں )

Twitter picture

آپ اپنے Twitter اکاؤنٹ کے ذریعے تبصرہ کر رہے ہیں۔ لاگ آؤٹ / تبدیل کریں )

Facebook photo

آپ اپنے Facebook اکاؤنٹ کے ذریعے تبصرہ کر رہے ہیں۔ لاگ آؤٹ / تبدیل کریں )

Google+ photo

آپ اپنے Google+ اکاؤنٹ کے ذریعے تبصرہ کر رہے ہیں۔ لاگ آؤٹ / تبدیل کریں )

Connecting to %s

%d bloggers like this: