غریبوں کا بجٹ

لو جی بجٹ بھی آ ہی گیا ، غریبوں کا بجٹ  ۔ ۔ ۔ واہ واہ کیا غریب نوازی ہے ، قوم کا درد تو صرف ان ہی سینوں میں جنہیں ہم سیاہ ست دان کہتے ہیں (پتہ نہیں کیوں یہ لفظ چوہے دان جیسا لگتا ہے جس میں ساری قوم پھنسی ہوئی ہے )  ۔ ۔ ۔  دفاعی بجٹ میں اضافہ ، کس کے لئے ؟ کس کا دفاع ، ہم اپنے وطن کا نہ تو نظریاتی دفاع کر پا رہے ہیں نہ ہی سرحدی (سیاچین اور سرکریک پر مذاق رات مثال ہیں ) تو پھر یہ اضافہ صرف وردی والوں کے لئے اسائیشیں فراہم کرنے کے لئے ہی تو ہے ۔
سرکاری ملازموں کے لئے ١٥ فیصد مہنگائی الاؤنس ، یعنی حکومت یہ مان رہی ہے کہ مہنگائی میں کم سے کم ١٥ فی صد اضافہ ہوا ہے ، اور بلواسطہ ٹیکسوں کی بھرمار کر دی ، یعنی تاجر برادری پر کیا فرق پڑتا ہے ، وہ اشائے صرف کی قیمتیں بڑھا دیں گے ، آخر میں پسے گا کون ۔ ۔۔  عوام  ۔ ۔ ۔ جو برسوں سے پستے چلے آ رہے ہیں  ۔ ۔ ۔ ۔
ارے واہ کمپیوٹر ہارڈ وئیر پر ڈیوٹی ختم  ۔ ۔ ۔ چلو جی اچھا ہے ، اب مزید کیفے کھلیں گے ، جہاں بے روزگاروں کے لئے چیٹنگ جیسی تفریحات ملیں گئیں  ۔ ۔ ۔  ہماری قوم نے کمپیوٹر کے ساتھ کیا کیا ہے  ۔ ۔ ۔
سو بجٹ تو ہوتا ہی امراء کا ہے ، غریب بجٹ نہ تو بنا سکتا ہے ، نہ ہی بجٹ سے فائدہ اٹھا سکتا ہے  ۔ ۔ ۔ یہ سب امیروں کے چونچلے ہیں ، غریب تو اللہ توکل ہی زندگی گذارتا ہے  ۔ ۔ ۔
Advertisements

جواب دیں

Fill in your details below or click an icon to log in:

WordPress.com Logo

آپ اپنے WordPress.com اکاؤنٹ کے ذریعے تبصرہ کر رہے ہیں۔ لاگ آؤٹ / تبدیل کریں )

Twitter picture

آپ اپنے Twitter اکاؤنٹ کے ذریعے تبصرہ کر رہے ہیں۔ لاگ آؤٹ / تبدیل کریں )

Facebook photo

آپ اپنے Facebook اکاؤنٹ کے ذریعے تبصرہ کر رہے ہیں۔ لاگ آؤٹ / تبدیل کریں )

Google+ photo

آپ اپنے Google+ اکاؤنٹ کے ذریعے تبصرہ کر رہے ہیں۔ لاگ آؤٹ / تبدیل کریں )

Connecting to %s

%d bloggers like this: